Wednesday 29 September 2021
- Advertisement -
HomeViewsArticleرہنما جن کو بنایا وہی رہ زن نکلے

رہنما جن کو بنایا وہی رہ زن نکلے

ہماری آپسی گفتگو کے دوران جب کبھی لیڈر، نیتا یا قائد کا ذکرآتا ہے تواسی لمحہ ہمارے ذہن کےافق پرسفید لباس میں ملبوس عمموماً اور شیروانی ٹوپی پہنے خصوصاً مگرزیادہ ترمکروہ شکل والی ایک انسان نما مخلوق ابھرآتی ہے. جسے ہم بھارت کےعوام بطور لیڈر، نیتا یا قائد اپنی قسمت یا بدقسمتی سمجھ کرتسلیم یا قبول کرچکے ہیں اوراس کریہہ الشکل مخلوق کو آزادئ وطن کی تاریخ سے آج تک مسلسل جھیلتے چلے آ رہے ہیں. میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ شاید غیر منقسم بھارت (اکھنڈ بھارت) کے لوگ یعنی آزادئ وطن کے وقت کے لوگ آزادی کے لئے ہرگزتیّارنہیں تھے!؟ بلکہ مجھے تو آج بھی ایسا محسوس ہوتا ہے کہ بھارت کی اکثریت اب بھی آزادی دیۓ جانے کے لائق نہیں ہے. گستاخی معاف! مگر آپ ہی بتائیے جن لوگوں کو آزادی کا مطلب ہی نہیں معلوم اور جن لوگوں نے صرف انگریزوں کو ملک سے نکال باہر کرنے کو ہی آزادی سمجھ لیا ہو، کیا وہ آزادی پانے کے مستحق ٹھہرتے ہیں؟ میرے خیال سے ہرگز نہیں.

خیر، تو قارئین بات لیڈر، نیتا یا قائد وغیرہ کی ہو رہی تھی. لہٰذا میں آج لیڈر، نیتا، قائد، رہنما، رہبر، سالار  کاروان یا پھرکارواں سالار وغیرہ وغیرہ کی مختصر تعریف بیان کرنا چاہونگا، تاکہ آزادئ وطن کی تاریخ سے آج تک پچھلے ٦٥/٦٦ سال سےلیڈر، نیتا، قائد رہنما، یا رہبر وغیرہ سے متعلق جو حقیقت اور سچائی ہمارے ذہن و دل سے بھلادی گئی ہے وہ پھر سے تازہ ہوجاۓ اور ہمیں یاد آجاۓ کہ لیڈر، قائد، نیتا کیوں ضروری ہوتا ہے، کیا اس کی ذمہ داریاں ہوتی ہیں اوراس کا کردار کیسا ہوتا ہے یا ہونا چاہئے وغیرہ وغیرہ.

Haqدوستو ایک ایسا شخص یا انسان جس میں بہت سے لوگوں، لوگوں کے گروہ یا ایک جم غفیر یا پھرایک پوری قوم کو ساتھ لے کر چلنے کی صلاحییت کےعلاوہ عام انسانوں سے ہٹ کر کچھ خاص خوبیاں اورصلاحیتیں ہوتی ہوں. مثَلاً وہ بہت قابل اور زمانہ شناس ہو، سنجیدہ طبع اور برد بار ہو، حکومتی امور میں ماہراوربہترین منتظم ہو، امانت دار ہو، قول وفعل کا سچا اورعہد و پیمان کا پکّا ہو، خدا ترس اورانسان دوست ہو، غیر جانبداراورغیر متعصب ہو اور خاص کرغریبوں کا ہمدرد اورغمگسار ہو. بےغرض نہیں بھی ہو اگر تو کم ازکم خود غرض اورغیر ذمّہ دار بھی نہ ہو. اپنی ضرورتوں پرعوام کی ضرورتوں کو ترجیح دینے والا ہو، خود بھوکا رہ کر عوام کو پہلے کھلاۓ، خود جاگ کر لوگوں کی پر سکون نیند کو یقینی بناۓ اور ملک اورعوام کی خاطر ہر طرح کی قربانی دینے کا جذبہ رکھتا ہو وغیرہ وغیرہ. جمہوریت میں عوام کم و بیش ایسی ہی خوبیوں کی حامل کسی شخصیت کو اپنی پسند اورمرضی سے چن کرلیڈر، نیتا یا قائد جیسا اعلی ترین اور با وقار ذمّہ داری کا تاج اس کے سر پر سجاتے ہیں، اس بھروسے اور یقین کے ساتھ کہ وہ اپنی اعلیٰ ترین صلاحیتوں کے بل بوتے پران کے کاروان زندگی کو لے کرمنزل مقصود کی جانب آگے بڑھتا رہے. عوام کی جان و مال، عزت و آبرو کی حفاظت کے ساتھ ساتھ مذہبی اور اظہار خیال کی آزادی، قانونی اور دستوری حقوق کے حصول، بلا لحاظ مذہت و ملّت عوام کی فلاح و بہبود اور ملک میں بھائی چارہ اور امن و امان کی ضمانت دے. ملک میں ایسا اثردار قانون نافذ کرے جو غیر سماجی عناصر کی شرارتوں اور سماج کے امن و امان کو بگاڑنے والے غنڈہ عناصر کے ساتھ سختی سے نمٹتے ہوے امن پسند شہریوں کو سکون سے جینے، ان کا من پسند طرز زندگی اختیار کرنے اور ترقی کرنے کے لئے سازگار ماحول مہیا کراۓ

تو قارئین ایسا ہوتا تھا اگلے زمانوں کا لیڈر، نیتا، قائد، رہنما، رہبر، سالار کاروان یا کاروان سالار. اور آج جب ہم آزادی کے ٦٦سال بعد عصر حاضر کے(اوپرتصویر میں موجود) جیسے سیاستد دانوں پرنظر ڈالتے ہیں تو ہمیں لیڈر، نیتا، قائد، رہنما، رہبر، سالار کاروان یا کارواں سالار کی شکل میں ایسے لوگ نظر آتے ہیں جن کے بارے میں بیساختہ کہنا پڑتا ہے کہ “رہنما جن کو بنایا وہی رہزن نکلے ~ مرد سمجھا کئیے سب ان کو مگر زن نکلے”. ایسا اس لئیے کہ مرد صرف مردانگی سے نہیں اپنے قول و فعل سے پہچانا جاتا ہے. محاوره مشور ہے کہپران جاۓ پر وچن نہ جاۓ” جو کہ مردوں کا قول ہے.

اوپرتصویر میں نظر آنے والے نام نہاد نیتا اور قائدین جو ہر طرح کی بدعنوانیوں میں ملوث پاۓ گئے ہیں، افسوس کہ وقف زمینات اورجائدادیں جو ہمارے آباء و اجداد نے ملّت کےغریب مسلمانوں کی فلاح و بہبود کی خاطر اور اپنے لئے ثواب جاریہ کی نیّت سے وقف کر گۓ تھے انھیں بھی نہیں بخشا اور اپنی دنیا پرستی کی بھینٹ چڑھا دیا.غیر مسلم برادران وطن کو کافر اور دشمن کہتے نہیں تھکتے والے، پولیس کو ہٹالینے پر ١٥ منٹ میں ملک کے ٩٠ کروڑ ہندؤں کا صفایا کردینے جیسے جذباتی نعروں سے بھولے بھالے ناخواندہ اورکم خواندہ مسلم عوام کو بیوقوف بنانے والے نام نہاد قائدین جب غریب مسلمانوں کی امانتیں چرا کر بانٹے کا موقع ملا تو اپنا گلہ پھاڑ پھاڑ کر دشمن اور کافر کہنے والوں کے ساتھ مسلمانوں کا حق بانٹنے میں ذرا بھی نہیں ہچکچاے!؟

خوش نصیب تھے وہ لوگ جو اپنی قیمتی زمین جائدادیں وقف فی سبیل اللہ کر کے اپنے لئے ثواب جاریہ کا انتظام کر گۓ اورافسوس صد افسوس کہ کتنے بدنصیب ہیں یہ لوگ جنہوں نے ان وقف زمین جائیدادوں کو بیچ کر اپنے لئے عذاب جاریہ کا انتظام کرلیا! اور غریب بدحال مسلمانوں کو ان کے حق سے محروم کر کے نا گفتہ بہ حالات میں تڑپنے سسکنے کے لئے چھوڑدیا

غریب مسلمانوں کی امانتوں میں خیانت کرنے والے اورغریب اور بے امان و بے نوا مسلمانوں کو دلتوں اور پچھڑی ذاتوں کے لوگوں سے بھی بری حالت میں چھوڑ کرشاہوں جیسی زندگی گزرنے والے یہ خود ساختہ مذہبی اور سیاسی لٹیرے ہرگز بھی مسلمانوں کی مذہبی اور سیاسی رہنمائی و قیادت کے لائق نہیں ہیں. میں ریاستی اور مرکزی حکومتوں سے وقف بورڈ اور محکمہ اقلیتی بہبود میں ہونے والی مسلسل بدعنوانیوں اور بےقائدگیوں کی سی بی آ ئی” جانچ کا پر زورمطالبہ کرتا ہوں اور وقف زمینات کو بازیاب کرکے ان کے صحیح استمعال اوران سے ہونے والی ممکنہ ہزاروں کروڑ روپیوں کی آمدنی کو مسلمانوں کی فلاح و بہبود کی خاطر استمعال کرنے کا مطالبہ کرتا ہوں. میں ہر دو حکومتوں سے یہ بھی مطالبہ کرتا ہوں کہ وقف بورڈ اور محکمہ اقلیتی بہبود میں غیر سیاسی اور دیانتدار ملازمین کا تقرر کیا جاۓ تاکہ حق حق دارتک پہنچ سکے ورنہ

اگر میں ضد پہ جو آؤں تو سن لے اے سورج ~ کرن کرن مرے حق کی وصول کرلوں گا.

To serve the nation better through journalism, Sirf News needs to increase the volume of news and views, for which we must recruit many journalists, pay news agencies and make a dedicated server host this website — to mention the most visible costs. Please contribute to preserve and promote our civilisation by donating generously:

Khwaja Nazim
Activist based in Hyderabad and former member of the Aam Aadmi Party

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

#SEBI approves frameworks for gold exchange & Social Stock Exchange. SEBI also approves amendments to delisting framework for equity shares.

India has broken many records in its vaccination process.

As on today it’s 86 Cr + vaccinations & 1 Cr+ vaccinations/ day on five days.

Let us take a minute to appreciate our indomitable front line warriors who made this possible by scaling mountains & crossing swelling rivers!

4

It is not possible to have fair elections (in Bhabanipur), not even 1%, so what Dilip Ghosh has said is right, polling booths will be captured, voters will not be allowed to come out. Hence elections get captured in WB: BJP National General Secy Kailash Vijayvargiya (28.09)

Sincerely thank our Hon PM Shri @narendramodi Ji for approving 850 MBBS seats from this year in Virudhunagar, Kallakurichi, Ooty, Namakkal, Tirupur, Ramanathapuram and in Thiruvallur colleges!

T N alone has seen a net addition of 2105 seats from 2014-2021!

Read further:
- Advertisment -

Popular since 2014

EDITORIALS

[prisna-google-website-translator]